افغان طالبان نے غزنی کی پولیس چیک پوسٹ پر حملہ کر کے نو پولیس اہلکار ہلاک کر دئیے

 ا فغان حکام نے   بتایا کہ طالبان عسکریت پسندوں کے حملے میں  نو افغان افغان پولیس اہلکار ہلاک ہوئے

 احمد خان سیرات نے اے ایف پی کو بتایا کہ طالبان نے حملہ جمعہ کے روز شروع کیا جب کہ حملہ دو قریبی چوکیوں پر  کیا گیا .

سیرات نے مزید کہا کہ طالبان نے اس واقعہ میں پولیس کی چوکی کو بم سے اڑا دیا ، جس کے نتیجے میں مقامی پولیس کے سربراہ کو ہلاک ہو گے اور

 نو اہلکار ہلاک ہوگئے اور چھ زخمی ہوگئے.

غزہ کے گورنر کے ترجمان عارف نوری نے اس بات کی تصدیق کی تھی.

اگست میں، طالبان جنگجوؤں نے غزنی  شہر پر حملہ کر کے افغان پولیس فورس کو پیچھے دھکیل دیا تھا  بعد میں پولیس نے مختصر علاقے پر دوبارہ قبضہ کر لیا تھا-

افغان طالبان کے موجودہ حملے نے افغان پولیس کو  نئی حکمت عملی اپنانے پر مجبور کر دیا ہے 

جنوری میں صدر اشرف غني نے کہا کہ ستمبر 2014 میں انہوں نے دفتر لیا جب سے 45،000 سیکورٹی فورسز ہلاک ہوگئے.

 ٹویٹر اکاؤنٹ پر طالبان نے دعوی کیا کہ 12 “فوجیوں” کو ہلاک کر دیا گیا ہے، اگرچہ گروپ  زیادہ  تر مبالغہ کرتا ہے.

جمعہ کے روز   ایک اور واقعہ میں جنوبی افغانستان میں زابل میں مقامی گورنر کے ترجمان گل اسلام سیال نے اے ایف پی کو بتایا کہ ایک پولیس چوکی پر فائرنگ کے بعد چار پولیس اہلکار اور دو زخمی ہوئے.

حملوں کے نتیجے میں یہ بات آتی ہے کہ امریکہ طالبان اور کابل حکومت کے ساتھ ایک امن معاہدے کو سبو تازکرانا چاہتا ہے.

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں
loading...

Related Articles