پاکپتن مزار کے باہر رقص کرنے کی سزا خواتین پولیس اہلکاروں کو برطرف کردیا گیا۔

صوبہ پنجاب کے شہر پاکپتن میں دو خواتین پولیس اہلکاروں کو مزار کے سامنے رقص کرنے پر برطرف کردیا گیا ہے ۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق پولیس تفتیش میں یہ بات سامنے آئی کے ثنا تنویر صوفی بزرگ بابافرید کے مزار پر ڈیوٹی کے دوران رقص کرتی رہی اور ساتھی خاتون اہلکار ویڈیو بناتی رہی

اس واقع کی ویڈیو سوشل میڈیا پر جنوری 2018 میں وائرل ہوئی تھی جس کے بعد پنجاب پولیس نے نوٹس لیا تھا اور چار اعلی سطح کے افسروں پر مشتمل جے آی ٹی بناِئی تھی جنہوں نے خواتین اہلکاروں کو معطل کر کے لائن حاضر کردیا تھا۔

پاکپتن پولیس ترجمان نے بتایا کہ ثنا تنویر 2017 میں پولیس میں بھر تی ہوئی تھیں اور ان کی عام طور پر ڈیوٹی خواتیں کے اجتمعات پر لگائی جاتی تھی ان کی ویڈیو سامنے آنے پر تفتیش کے دوران ان کو اپنے دفاع کا بھرپور حق دیا گیا لیکن لیکن یہ اپنے اوپر لگنے والے الزامات کو غلط ثابت نہ کر پائیں جس کے بعد ان کو پولیس ایکٹ کے مطابق پولیس سے برطرف کر دیا گیا ۔

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں
loading...

Related Articles