اسلام آباد، چڑیا گھر کے ہاتھی کاون کو بیرونِ ملک منتقل کرنے کا فیصلہ –


اسلام آباد: وفاقی حکومت نے مرغزار چڑیا گھر کے ہاتھی کاون کو عدالتی حکم پر کمبوڈیا منتقل کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

وزیراعظم کےمشیر برائے موسمیاتی تبدیلی ملک امین اسلم نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ اسلام آبادکے چڑیا گھر مرغزار کے کاون ہاتھی کو  عدالتی حکم پر محفوظ مقام پر منتقل کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ کاون کو کمبوڈیاکی پناگاہ میں منتقل کیاجارہا ہے، کاون کو  کمبوڈیا بھجوانا ہمارے لیے اداس کر دینے والا فیصلہ ہے مگر اُس کی صحت کی وجہ سے یہ قدم اٹھا رہے ہیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’ہاتھی کی عمر 36سال ہے اور وہ ابھی سے نفسیاتی مسائل کاشکار ہوگیا ہے، ایشیائی ہاتھیوں کی عمریں تقریباً 40 سے 45 سال کے درمیان ہوتی ہیں‘۔

ملک امین کا کہنا تھا کہ ’2015 میں انٹرنیشنل پٹیشن بھی آئی جس پر2لاکھ افرادنےدستخط کئے جبکہ اسلام آباد ہائیکورٹ نے بھی ہاتھی کوکسی پناہ گاہ منتقل کرنے کا حکم دیا‘۔

مزید پڑھیں: اسلام آباد، مرغزار چڑیا گھر کے تمام جانوروں کو 6 روز میں محفوظ مقامات پر منتقل کرنے کا حکم

مشیر برائے موسمیاتی تبدیلی کا مزید کہنا تھا کہ ہاتھی کوریٹائرکرکےکمبوڈیا بھیجاجارہا ہے، اسلام آباد چڑیا گھر کے پنجروں میں موجود جانوروں کو بھی عدالتی حکم کی روشنی میں آزاد کردیا جائے گا۔

انہوں نے وفاقی دارالحکومت میں سفاری پارک بنانے کا اعلان کرتے ہوئے بتایا کہ حکومت نے چڑیا گھر کے لیے مالی سال کے بجٹ میں فنڈ بھی مختص کیا ہے۔

ملک امین اسلم کا کہنا تھا کہ کاون کو کمبوڈیا بھیجنے کے فیصلے سے متعلق اسلام آباد ہائی کورٹ کو آگاہ کردیا ہے۔

مرغزار چڑیا گھر کیس کی سماعت

قبل ازیں اسلام آباد ہائی کورٹ میں مرغزار چڑیا گھر کیس کی سماعت ہوئی جس میں جسٹس اطہر من اللہ نے استفسار کیا کہ کاون ہاتھی اور دیگر جانوروں کی منتقلی کے حوالے سے کیا اقدامات کیے گئے۔ سیکریٹری ماحولیات نے عدالت کو آگاہ کیا کہ کاون کی بیرون ملک منتقلی کے انتظامات کیے جارہے ہیں، اس ضمن میں شپنگ کا انتظام ہونا ابھی باقی ہے۔

محکمہ وائلڈ لائف کے حکام نے عدالت کو آگاہ کیا کہ کاون کی منتقلی کے حوالے سے ہم نے تین ممالک نیپال، سری لنکا اور کمبوڈیا کے ناموں پر غور کیا، کمبوڈیا منتقلی ہمیں آسان اور سستی پڑے گی اس لیے کاون کو وہیں بھیجنے کا فیصلہ کیا اور اس حوالے سے حکام سے رابطے بھی شروع کردیے ہیں۔

سیکریٹری ماحولیات نے عدالت کو آگاہ کیا کہ ویزہ کے اجرا اور قانونی کارروائی میں چار ہفتوں کا وقت لگے گا، عدالت ہمیں ایک ماہ کی مزید مہلت دے اس دوران کاون کو کمبوڈیا منتقل کردیا جائے گا۔

عدالتی استفسار پر سیکریٹری ماحوالیات نے بتایا کہ ’مگر مچھ کو محفوظ مقام پر منتقل کردیا گیا‘۔ چیف جسسٹس اطہر من اللہ کا کہنا تھا کہ حکومتِ پاکستان جانوروں کے حقوق کے معاملے میں دنیا پر فوقیت لے رہی ہے،انسان کی طاقت کمزور کو قید کرنا نہیں، اس کی حفاظت کرنا ہے۔

fb-share-icon0

Tweet
20

Comments

comments



سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں
loading...

Related Articles