بھارتی خاتون وزیر ایسا دعویٰ جسے سن کر ہنسی نہ رک پائے –


نئی دہلی : کورونا وائرس کے متعلق گاہے بگاہے ایسے مضحکہ خیز بیانات سننے کو ملتے رہتے ہیں کہ آدمی سر پیٹ کر رہ جائے۔ ایک ایسا ہی بیان بھارتی ریاست مدھیہ پردیش کی خاتون وزیر امرتی دیوی نے دیا ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق امرتی دیوی کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس میرا کچھ نہیں بگاڑ سکتا کیونکہ میں گوبر اور مٹی میں پیدا ہوئی تھی، جہاں کٹاڑوں (جراثیوں) کی بھرمار ہوتی ہے۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ایک سوال کے جواب میں امرتی دیوی نے اپنی ٹھوڑی کے نیچے لٹکتے فیس ماسک کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ مجھے یہ زبردستی پہنایا گیا ہے۔ میں گوبر اور مٹی میں پیدا ہوئی ہوں اور اتنے جراثیم دیکھے ہیں کہ ان کے سامنے کورونا تو کوئی چیز ہی نہیں ہے

امرتی دیوی کے اس بیان پر مبنی ویڈیو سوشل میڈیا پر تیزی سے وائرل ہو رہی ہے، رپورٹ کے مطابق بھارت میں کسی وزیر کی طرف سے ایسا بیان پہلی بار سامنے نہیں آیا۔

اس سے قبل بھی ایک اور وزیر ارجن رام میگھوال نے کہا تھا کہ کورونا وائرس کا علاج پاپڑ کھا کر بھی کیا جا سکتا ہے۔ حالانکہ وہ بعد میں خود بھی کورونا وائرس کا شکار ہوگئے تھے۔

مزید پڑھیں : پاپڑ سے کرونا کا ‘علاج’ کرنے والا بھارتی وزیر خود کرونا کا شکار

ارجن رام میگھوال نے ’بھابھی جی‘ نامی پاپڑ کے متعلق یہ بات کہی تھی اور اس برانڈ کے پاپڑوں کی مفت میں تشہیر کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ کورونا وائرس کا علاج ہیں، یہ پاپڑ کھانے سے جسم میں اینٹی باڈیز پیدا ہوتی ہیں جو کورونا وائرس کو ختم کر دیتی ہیں۔

fb-share-icon0

Tweet
20

Comments

comments



سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں
loading...

Related Articles