شوگرکمیشن رپورٹ کی تحقیقات کے لیے مشترکہ کمیٹی قائم، چیئرمین نیب نے اہم ہدایات جاری کردیں


اسلام آباد: قومی احتساب بیورو (نیب)  نے شوگر کمیشن رپورٹ کی تحقیقات کے لیے مشترکہ تحقیقاتی کمیٹی قائم کردی، چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال  نےچینی پر غیر قانونی سبسڈی لینے والوں کے خلاف سخت کارروائی کرنے کی ہدایت بھی کی۔

اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق چیئرمین نیب کی زیرصدارت اجلاس کا انعقاد کیا گیا جس میں ڈپٹی چیئرمین نیب، ڈی جی آپریشن، ڈی جی نیب راولپنڈی سمیت دیگر اعلیٰ عہدیداران شامل ہوئے۔

اجلاس میں شوگرکمیشن رپورٹ کاجائزہ لیا گیا اور پھر چینی پر سبسڈی لینے والوں کے خلاف تحقیقات کے لیے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم تشکیل دینے کا فیصلہ بھی کیا گیا جس میں دو  انویسٹی گیشن آفیسر،  معاشی اور قانونی ماہرین شامل ہوں گے۔

نیب کی جانب سے اجلاس کا اعلامیہ بھی جاری کیا گیا جس میں بتایا گیا ہے کہ تحقیقاتی ٹیم میں شوگر انڈسٹری کے متعلقہ اور فرانزک ماہرین بھی شامل ہوں گے، کیس افسر، ایڈیشنل ڈائریکٹر اور متعلقہ ڈائریکٹرز کو بھی ٹیم کا حصہ بنایا گیا ہے۔

اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ تحقیقات کی نگرانی ڈی جی نیب راولپنڈی عرفان منگی کریں گے جبکہ ہر ماہ شوگر کمیشن رپورٹ پر ہونے والی تحقیقات سے متعلق چیئرمین کی زیر صدارت اجلاس ہو گا جس میں کارکردگی اور رپورٹ کا جائزہ لیا جائے گا۔

مزید پڑھیں: شوگر کمیشن رپورٹ پر اب ریکوری ہو گی اور سزائیں ملیں گی، مراد سعید

یہ بھی پڑھیں: شوگر انکوائری کمیشن کی رپورٹ پبلک کرنے کے بعد وزیراعظم کا ایک اور بڑا فیصلہ

تحقیقاتی ٹیم تمام صوبوں سے چینی سبسڈی سےمتعلق مکمل تفصیلات طلب کرے گی، سیکیورٹی ایکسچینج کمپنی پاکستان (ایس ای سی پی) سے متعلقہ کمپنیوں کی قانونی، مالی اور سالانہ آڈٹ رپورٹس بھی حاصل کی جائیں گی اور  چینی پرغیرقانونی سبسڈی لینے والوں کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے ہدایت کی کہ چینی سبسڈی کی تحقیقات غیرجانبدارانہ،شفاف کی جائیں، تحقیقات میں متعلقہ افراد اور محکموں کو صفائی کا پورا موقع دیاجائے، بعد ازاں چینی پر غیرقانونی طریقے سے سبسڈی لینےوالوں کے خلاف کارروائی کی جائے گی اور نوازشات کی مد میں اربوں وصول کرنے والوں کو قانون کے کٹھہرے میں لایا جائے گا۔

fb-share-icon0

Tweet
20

Comments

comments



سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں
loading...

Related Articles