’’نام کے ساتھ ’بھٹو‘ لکھنے سے کوئی لیڈر نہیں بن جاتا‘‘


لاہور: معاون خصوصی برائے سیاسی روابط شہباز گل کا کہنا ہے کہ نام کے ساتھ بھٹو لکھنے سے کوئی لیڈر نہیں بن جاتا۔

اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق معاون خصوصی شہباز گل نے بلاول بھٹو کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ نام کے ساتھ بھٹو لکھنے سے کوئی لیڈر نہیں بن جاتا، ان کے منہ میں جو آتا ہے وہ کہہ دیتے ہیں، اب یہ دور نہیں ہے آپ کے منہ میں جو آئے گا بولیں گے اور لوگ اعتبار کرلیں گے۔

انہوں نے کہا کہ بلاول جمہوریت کے جعلی علمبردار ہیں، پرچی پر چیئرمین بننے والے پہلے پارٹی میں جمہوریت لے کر آئیں۔

معاون خصوصی نے کہا کہ بلاول صاحب پختونخوا نے دو مرتبہ عمران خان کے حق میں فیصلہ سنایا، پختونخوا سے آپ 2013 اور 2018 میں مسترد ہوئے، آگے بھی پختونخوا کے غیور عوام کرپشن کے مہارتھیوں کو موقع نہیں دیں گے۔

مزید پڑھیں: ایک قانون نہیں ہوگا تو کرپشن کے ناسور کا خاتمہ نہیں کرسکیں گے، بلاول بھٹو

انہوں نے کہا کہ لاڑکانہ سے ہارنے والے میاں بلاول پختونخوا لینے کی بات کرتے ہیں، مال بنانے اور کرپشن کے راستے پر چلنے والے کے منہ سے عوام کی باتیں اچھی نہیں لگتیں۔

شہباز گل نے کہا کہ ان کے جلسے سے وزیراعظم کا استعفیٰ تو دور کی بات ہے میرا استعفیٰ بھی نہیں ملے گا۔

انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم کا اتحاد غیرفطری ہے، محض کرپشن بچانے کے لیے یہ اکٹھے ہیں، پی ڈی ایم رہنما ذاتی مفادات کے ایجنڈے پر متفق ہیں۔

معاون خصوصی نے کہا کہ پی ڈی ایم غریب کارکنان کو مفادات کی خاطر موت کے منہ میں دھکیل رہے ہیں۔

Comments



سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں
loading...

Related Articles